World’s fastest speed boat arrives in Pakistan to boost tourism

0
36
wq

تبصرے

غیر ملکی پاکستانیوں کی سرمایہ کاری ٹیم نے پاکستان میں ایڈونچر ٹورازم کی حوصلہ افزائی کے لیے دنیا کی سب سے بڑی اور تیز ترین سپیڈ بوٹ تیار کی۔

گزشتہ ہفتے دنیا کی تیز ترین کشتی ملک میں پہنچی کیونکہ ملک میں سیاحت کے بہتر مواقع نے سرمایہ کاروں کی دلچسپی کو متاثر کیا ہے۔

امریکہ، آسٹریلیا، کینیڈا، کوریا، جاپان، نیوزی لینڈ، تھائی لینڈ اور ترکی جیسے عالمی سیاحتی صنعت میں نمایاں مقام رکھنے والے ممالک میں جدید ترین سپیڈ بوٹس کام کر رہی ہیں۔

“یہ پہلی بار ہے کہ پاکستان میں اس طرح کی جدید کشتی درآمد کی گئی ہے،” گرین لینڈ کارپوریشن کے ڈائریکٹر ذوالفقار مومن نے کہا کہ یہ کشتی قائم کرنے والے غیر ملکی پاکستانیوں کی کارپوریشن ہے۔

مزید یہ کہ اسپیڈ بوٹ ہلکے وزن کی ہے لیکن جھیلوں اور دریاؤں کے اتھلے پانیوں میں تیز سفر کرنے کی صلاحیت کے ساتھ مضبوط ہے۔ اس میں دو 320/320 ہارس پاور کے جیٹ انجن ہیں، 640 ہارس پاور یا 12,400 CC کی عام طاقت۔

اسپیڈ بوٹ کو امریکی کمپنی مرکری کے جیٹ انجن سے فکس کیا گیا ہے، ریفلیکٹر فن لینڈ میں تیار کیے گئے جب کہ کشتی ترکی میں بنائی گئی۔ یہ اعلی درجے کی حفاظتی خصوصیات پر مشتمل ہے، جیسے کہ سیٹ بیلٹ کا بہتر نظام۔

دریں اثناء مومن نے بتایا کہ ہنزہ پاکستان کا ایک خوبصورت پرکشش حصہ ہونے کی وجہ سے مئی کے مہینے سے کشتی چلانے کے لیے نامزد کیا گیا تھا۔

ملک بھر سے ہنزہ آنے والے سیاح اس منفرد کشتی سے لطف اندوز ہو سکیں گے۔ پاکستان میں مقامی سیاحت تیزی سے بڑھ رہی ہے اور اسی طرح خیبرپختونخوا [K-P] اور گلگت بلتستان [G-B] کے شمالی علاقوں میں ہوٹل انڈسٹری بھی تیزی سے ترقی کر رہی ہے۔”

کشتی کا راستہ بالائی ہنزہ میں ششقت اور حسینی پل کے درمیان ہوگا اور زائرین 15 منٹ کی سواری میں اردگر کے دلکش مناظر کا مزہ لے سکیں گے۔

مقامی اور غیر ملکی سیاحوں کی حوصلہ افزائی کے لیے وفاقی حکومت کے اقدامات کے نتیجے میں، اسٹاک ہولڈرز صنعت میں سرمایہ کاری میں دلچسپی ظاہر کر رہے ہیں۔

سیاحتی خطہ میں پیدا ہونے والے مواقع سے فائدہ اٹھانے کے لیے، گرین لینڈ کارپوریشن نے جی بی میں متعدد منصوبوں سے فائدہ اٹھانے کا فیصلہ کیا، جن میں ایک زپ لائن اور دیگر ایڈونچر سیاحتی خدمات شامل ہیں۔

Previous articleOrient AC Price In Pakistan 2022- Latest Models And Best Orient AC
Next articleAustralian University Develops World’s First Bionic Eye To Fully Restore Vision In Blind People

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here